0

لورہ میں غیر قانونی کرش پلانٹ سے,خان پور ڈیم میں خاکے (سہلڈ) کے آنے سے ڈیم کی عمر میں بتدریج کمی واقع ہو رہی ہے

ضلع ایبٹ آباد کی نومولود تحصیل لورہ میں غیر قانونی کرش پلانٹ سے ماحولیاتی آلودگی بڑھنے, بلین ٹری سونامی منصوبے کی تباہی اور بالخصوص خان پور ڈیم میں خاکے (سہلڈ) کے آنے سے ڈیم کی عمر میں بتدریج کمی واقع ہو رہی ہے

ماحولیاتی تحفظ کی ایجنسی سمیت خیبر پختون خواہ کے متعلقہ اداروں اور اتھارٹیز نے چپ کا روزہ رکھ لیا ہے. تفصیلات کے مطابق تھانہ لورہ کی حدود بدنال, مالمولہ اور دکھن پیسر کے مقام پر لگائے گے کریشن پلانٹس نے ماحول کو مکمل تباہی سے دوچار کر دیا ہے جہاں سے ہزاروں ٹن خاکہ ندی ہرو کے زریعے یومیہ خان پور ڈیم تک پہنچتا ہے جس سے ڈیم میں گارے کی مقدار میں یومیہ اضافہ ہو رہا اور ڈیم کی عمر میں بھی کمی واقع ہو رہی ہے اس حوالے سے وفاقی وزارت آبی وسائل, واپڈا اتھارٹیز مکمل خاموش ہیں جبکہ یونین کونسل پھلہ ویلیج کونسل دکھن پیسر میں قائم غیر قانونی کریش پلانٹ سے درختوں کو شدید خطرہ لاحق ہے جو وزیراعظم عمران خان کے بلین ٹری سونامی کی نفی بھی کر رہا ہے اس حوالے سے یہ بھی معلوم ہوا ہے کہ مزکورہ پلانٹ کی لیز کے لیے ایسے رقبے کا انتخاب کیا گیا جس میں کہو کےہزاروں درخت لگے ہوئے ہیں مقامی آبادی نے اس پلانٹ کے خلاف متعلقہ اداروں سے رجوح بھی کر رکھا ہے جبکہ پشاور ہائی کورٹ نے اس حوالے سے حکم امتناعی بھی جاری کر رکھا ہے اس کے باوجود مزکورہ کریشن پلانٹ مسلسل چلایا جا رہا ہے جس سے خاکہ خان پور ڈیم تک پہنچ رہا ہے دکھن پیسر کریش پلانٹ کا لائسنس نہ جاری کرنے کے خلاف مقامی آبادی نے خیبر پختون خواہ انڈسٹری, انواہرمنٹ ڈیپارٹمنٹ ایبٹ آباد سے بھی رجوح کر رکھا ہے, خیبر پختون خواہ کے مختلف محکموں کی مجرمانہ خاموشی کے باعث اس خوبصورت ترین علاقے میں ماحولیاتی آلودگی کے مسائل میں مسلسل اضافہ ریکارڈ کیا جا رہا ہے…..

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں