0

حکومتِ پاکستان کا گستاخانہ خاکوں کے جواب میں متفقہ اورمؤثر ردعمل دینے کا فیصلہ

اسلام آباد : گستاخانہ خاکوں کے جواب میں متفقہ اورمؤثر ردعمل دینے کا فیصلہ کرتے ہوئے وزیراعظم خود اسلامی ممالک کے سربراہان سے رابطے کریں گے۔

تفصیلات کے مطابق حکومت پاکستان نے گستاخانہ خاکوں کے جواب میں متفقہ اورمؤثر ردعمل دینے کا فیصلہ کرلیا، اس سلسلے میں وزیراعظم خود اسلامی ممالک کے سربراہان سے رابطے کریں گے۔

وزیراعظم عمران خان کے رابطوں کا فیصلہ کابینہ میں کیاگیا، وزیراعظم تمام اسلامی ممالک کو خط بھیجیں گے جبکہ وزیرخارجہ کو ہدایت کی ہے کہ اوآئی سی اجلاس میں معاملہ ایجنڈے پر لایا جائے گا اور ایسےواقعات کی روک تھام کیلئےسفارتی وقانونی اقدامات کیے جائیں گے۔

یاد رہے وزیراعظم کی زیرصدارت وفاقی کابینہ کے اجلاس میں فرانسیسی صدرکی طرف سےمسلمانوں کے جذبات مجروح کرنےکی مذمت کرتے ہوئے کابینہ نے گستاخانہ خاکوں سےمسلمانوں کےجذبات کوپہنچنے والی ٹھیس کا نوٹس لیا۔

مزید پڑھیں : حضرت محمد ﷺکی شان میں گستاخی کسی صورت قبول نہیں، وزیراعظم 

اجلاس میں کہا گیا کہ کسی مسلمان کیلئےنبی ﷺکی شان میں گستاخی ناقابل برداشت ہے، ہرفورم پرمسلمانوں کے جذبات کی ترجمانی بھرپوراندازسےکی جائےگی۔

اسلام آباد:حکومت کا ایک بارپھر اوآئی سی کےپلیٹ فارم تک رسائی کا فیصلہ کرتے ہوئے کہا کہ او آئی سی پلیٹ فارم سےعالمی دنیاتک امت مسلمہ کےتحفظات پہنچائےجائیں گے۔

اجلاس میں وزیراعظم نے کابینہ ارکان سے ناموس رسالت پر خصوصی گفتگو کرتے ہوئے کہاتھا گستاخانہ خاکوں کا معاملہ عالمی سطح پر اٹھاؤں گا، حضرت محمد ﷺکی شان میں گستاخی کسی صورت قبول نہیں۔

عمران خان کا کہنا تھا کہ اظہار آزادی رائے اورگستاخی میں فرق ہے، ناموس رسالت کا مقدمہ خود لڑوں گا، گستاخانہ خاکوں سےکروڑوں مسلمانوں کےجذبات مجروح ہوئے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں