0

ایبٹ آباد گل ڈھوک دسویں جماعت کا طالب علم قتل

صدرہ کا رہائشی فیضان ولد ساجد والدین کا واحد سہارا تھا جو ایبٹ آباد کے لئے گھر سے نکلا ہی تھا کہ مسلح افراد نے اندھا دھند فائرنگ کرکے موت کے گھاٹ اتار دیا

ایبٹ آباد تھانہ بگنوتر کی حدود گل ڈھوک صدرہ میں دسویں جماعت کے طالبعلم کو آتشیں اسلحہ سے اندھا دھند فائرنگ کر کے قتل کر دیا گیا ہے اور اس کی نعش گھر کے قریب ایک ویرانے میں پھینک دی گئی مقتول اپنے والدین کا واحد سہارا تھا پولیس نے قتل کا مقدمہ درج کر کے واقعہ کی تفتیش شروع کر دی ہے اور نعش پوسٹمارٹم کے بعد ورثاء کے حوالے کر دی ہے تفصیلات کے مطابق تھانہ بگنوتر کی حدود گل ڈھوک صدرہ کے رہائشی دسویں جماعت کے طالبعلم فیضان ولد ساجد صبح گھر سے ایبٹ آباد کے لیئے نکلا مگر ایبٹ آباد پہنچنے کے بجائے اسے قتل کر دیا گیا ورثاء نے محمد شفیق، چن زیب پسران علی مردان اور عمران سلیم پسران رستم کے خلاف قتل کی دعویداری کر دی ہے پولیس نے مذکورہ ملزمان کے خلاف مقدمہ درج کر کے ان کی گرفتاری کے لیئے چھاپے مارنا شروع کر دیئے ہیں اور نعش ورثاء کے حوالے کر دی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں