0

آل گورنمنٹ ایمپلائز گرینڈ آلائنس ہزارہ کا حکومت ملازمین کش پالیسوں کےخلاف جلسہ

ایبٹ آباد.آل گورنمنٹ ایمپلائز گرینڈ آلائنس ہزارہ کا حکومت ملازمین کش پالیسوں کےخلاف جلسہ میں ملازمین کا سمندر امڈ آیا،تمام سرکاری محکموں تعلیم ،صحت ،سی اینڈ ڈبلیو ،واپڈا ،ٹی ایم ایز ،ایپکا،پبلک ہیلتھ،کالجز ،اساتذہ تنظیموں کے قائدین اور ملازمین نے تنخواہوں میں اضافہ سمیت دیگر مطالبات کی توثیق کرتے ہوئے اسلام آباد میں وزیر اعظم ہاؤس کے بائر دھرنا کی حمایت کی ہے،آل ایمپلائز گرینڈ آلائنس ہزارہ نے منگل کے روز ایبٹ آباد ہائی سکول نمبر تین کے گراؤنڈ میں ملازمین کش پالیسوں کےخلاف جلسہ کا انعقاد کیاگیا،جس میں ہزارہ بھر کےہزاروں ملازمین شریک ہوئے،اس موقع چیئرمین آل ایمپلائز خیبر پختونخوا اسلام الدین،بنارس خان جدون چئیر مین آل گورنمنٹ ایمپلائز گرینڈ آلائنس ہزارہ،حاجی عبدالمناف،صوبائی صدر تنظیم اساتذہ خیر اللہ خواری،عزیز اللہ خان ،دوست محمد کھوسہ،سالاراسلام طارق ،سمیع اللہ خلیل ،ریاض بہار اخوانزادہ،خالد جاوید، سلیم خان شیر پاؤ چیئر مین نادرہ یونین ،سرفراز عباسی انجمن پٹواریاں وقانون گوئیاں کے صوبائی جنرل سیکرٹری ،اکرام باچہ،میمونہ نازلی،امتیاز خان،جمیل اختر تنولی ،نصر اللہ خان ،سرداراورنگزیب،ناصر الدین کے علاوہ دیگر نے خطاب کیا ،مقررین کا کہنا تھا19جولائی کو ملازمین کے حقوق کے تحفظ تحریک کا آغاز کیا،متفقہ طور پراسلام آباد میں 10ستمبر کو اسلام آباد دھرنے کا فیصلہ کیا ،ملک کے تمام اداروں کی نجکاری کا ایجنڈہ پورا کیا جارہا ہے، عالمی استعماری قوت کے مشن کو پورا نہیں کرنے دینگے،تاریخ گواہ ہے آمروں کے دور میں بھی اپنا حق حاصل کیا،انہوں نے کہا کہ حکومت کےملازمین سےکئے وعدے پورے نہیں ہوئے، پارلیمنٹرین اور عدلیہ کی تنخواوں اور مراعات میں اضافہ کیالیکن ملازمین کو ہوشرباء مہنگائی کی چکی میں چھوڑ دیا اور آئی ایم ایف کی پالیسی کے تحت سلوک کیا جارہا ہے،ملک کی تاریخ کے بدترین حکمرانوں کا سامنا ہے،انہوں نے حکومتی پالیسوں کو عوام دشمن ،غریب دشمن ،ملازم دشمن قرار دیتے ہوئے مسترد کیا،مقررین کا کہنا تھا ملک بھر میں ملازمین کے لئے یکساں نظام کا چاہتے ہیں،قبل ازیں ایبٹ آباد بچاؤ تحریک کے قائدین سردار فدا حسین ،امجد خان ،حاجی ایاز خان ،اسد خان نے بھی ملازمین سے اظہار یکجہتی کے لئے جلسہ گاہ آئے اور ملازمین کے مطالبات کوجائز قرار دیا،جلسہ کےاختتام پر ہائی سکول سےایبٹ آباد پریس کلب تک ہزارہ کی تاریخ میں تاریخی ریلی بھی نکالی گئی جس میں مطالبات کے بینرز اور پلے کارڈ بھی اٹھا رکھے تھے۔میڈیا کو مطالبات کی فہرست پیش کی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں